عالم انسانیت کے معجزات

-: تھوڑی چیز زیادہ ہو گئی

-: اُمِ سُلَیم کی روٹیاں

-: حضرت جابر کی کھجوریں

-: حضرت ابوہریرہ کی تھیلی

-: اُمِ مالک کا کُپّہ

-: بابرکت پیالہ

-: تھوڑا توشہ عظیم برکت

-: برکت والی کلیجی

-: حضرت ابوہریرہ اور ایک پیالہ دودھ

-: آشوب چشم سے شفاء

-: سانپ کا زہر اُتر گیا

-: ٹوٹی ہوئی ٹانگ درست ہو گئی

-: تلوار کا زخم اچھا ہو گیا

-: اندھا بینا ہو گیا

-: گونگا بولنے لگا

-: حضرت قتادہ کی آنکھ

-: فائدہ

-: قے میں کالا پِلّا گرا

-: جنون اچھا ہو گیا

-: جلا ہوا بچہ اچھا ہو گیا

-: مرض نسیان دور ہو گیا

-: مقبولیتِ دُعاء

-: قریش پر قحط کا عذاب

-: سردارانِ قریش کی ہلاکت

-: مدینہ کی آب و ہوا اچھی ہو گئی

-: اُمِ حرام کے لئے دعاء شہادت

-: ستر برس کا جوان

-: برکت اولاد کی دعا

-: حضرت جریر کے حق میں دعا

-: حضرت جریر کے حق میں دعا

حضرت جریر بن عبداﷲ صحابی رضی اللہ تعالیٰ عنہ گھوڑے کی پیٹھ پر جم کر بیٹھ نہںا سکتے تھے حضورِ اقدس صلی اﷲ تعالیٰ علہ وسلم نے ان کو” ذوالخلصہ ” کے بت خانہ کو توڑنے کے لئے بھجنا چاہا تو انہوں نے ییو عذر پش کاٹ کہ یا رسول اﷲ! (صلی اﷲ تعالیٰ علہا وسلم) مں گھوڑے پر جم کر بیٹھ نہںر سکتا۔ آپ صلی اﷲ تعالیٰ علہ وسلم نے ان کے سینے پر ہاتھ مارا اور یہ دعا فرمائی کہ “یااﷲ! اس کو گھوڑے پر جم کر بٹھنے کی قوت عطا فرما اور اس کو ہادی و مہدی بنا ” اس دعا کے بعد حضرت جریر رضی اﷲ تعالیٰ عنہ گھوڑے پر سوار ہوئے اور قبلہر احمس کے ایک سو پچاس سواروں کا لشکر لے کر گئے اوراس بت خانہ کو توڑ پھوڑ کر جلا ڈالا اور مزاحمت کرنے والے کفار کو بھی قتل کر ڈالا جب واپس آئے تو حضور صلی اﷲ تعالیٰ علہڑ وسلم نے ان کے لئے اور قبلہے احمس کے حق مںت دعا فرمائی۔

(مسلم جلد۲ ص۲۹۷ فضائل جرير)

-: قبلہ دوس کا اسلام

-: ایک متکبر کا انجام

-: مردے زندہ ہو گئے

-: لڑکی قبر سے نکل آئی

-: پکی ہوئی بکری زندہ ہو گئی